ابوعاقلہ کے قتل پر قطر کی وزارت خارجہ کا شدید ردعمل

شیرین ابو عاقلہ کو بدھ کی صبح گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا جب وہ اور دیگر صحافی جنین پناہ گزین کیمپ میں اسرائیلی قابض فوج کے چھاپے کی کوریج کر رہے تھے۔

فاران: قطر کی وزارتِ خارجہ نے الجزیرہ کی نامہ نگار شیرین ابو عاقلہ کی آج صبح جنین پناہ گزین کیمپ میں اسرائیلی قابض فوج کے ہاتھوں ہلاکت کی شدید مذمت کی ہے۔
وزارت کی ترجمان لولوالخاطر نے اپنے ٹویٹر پیج پر انگریزی زبان میں لکھا: (ترجمہ) “اسرائیلی قابض فوجیوں نے الجزیرہ کی نمائندہ شیرین ابو عاقلہ کو صحافتی وردی میں چہرے پر گولی مار کر قتل کر دیا۔ وہ جنین پناہ گزین کیمپ میں ان کے حملے کی خبررسانی کر رہی تھیں۔”
ترجمان وزارتِ خارجہ نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ ریاستی سرپرستی میں اسرائیلی مسلح دہشت گردی کو فی الفور روکا جائے نیز اسرائیل کی غیر مشروط حمایت ختم کی جائے۔
شیرین ابو عاقلہ کو بدھ کی صبح گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا جب وہ اور دیگر صحافی جنین پناہ گزین کیمپ میں اسرائیلی قابض فوج کے چھاپے کی کوریج کر رہے تھے۔
قطر میں قائم نشریاتی ادارے الجزیرہ کے مطابق 51 سالہ ابو عاقلہ کو اسرائیلی فورسز نے “جان بوجھ کر” گولی ماری ہے۔
اسی ادارے کے لیے کام کرنے والے ایک اور صحافی کے بھی زخمی ہونے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔