اسرائیلی جاسوسی سافٹ ویئر سے ہسپانوی وزیر اعظم اور وزیر دفاع کی جاسوسی

ہسپانوی حکومت نے انکشاف کیا ہے کہ اسپین کے وزیر اعظم پیڈرو سانچیز اور وزیر دفاع مارگریٹا روبلس کے فون اسرائیلی "پیگاسس" سافٹ ویئر کا استعمال کرتے ہوئے ہیک کیے گئے ہیں۔

فاران: ہسپانوی صدارتی امور کے وزیر فیلکس بولانوس نے ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ “یہ مفروضے نہیں ہیں”۔ ہینگ کا یہ واقعہ 2021 میں ریکارڈ کیے گئے “انتہائی سنگین” حقائق میں سے ایک ہے۔

بولانوس نے وضاحت کی کہ “جب ہم بیرونی مداخلت کے بارے میں بات کرتے ہیں تو ہمارا مطلب ہے کہ یہ سرکاری اداروں کا کام نہیں ہے اور یہ عدالتی مینڈیٹ کے ساتھ نہیں کیا گیا۔”

انہوں نے نشاندہی کی کہ سانچیز کے فون کو مئی 2021 میں دو بار نشانہ بنایا گیا تھا، اور روبلز کے فون کو جون 2021 میں ایک بار نشانہ بنایا گیا تھا۔

بولانوس نے کہا کہ دونوں ہی صورتوں میں، ہدف دو موبائل فونز سے ڈیٹا کی ایک مخصوص مقدار حاصل کرنا تھا۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ان تاریخوں کے بعد خفیہ طور پرموبائل ہیکنگ کی دوسری کارروائیوں کا کوئی ثبوت نہیں ہے۔”

یہ قابل ذکر ہے کہ ایک بار موبائل فون پر پروگرام ڈاؤن لوڈ ہونے کے بعد اسرائیلی کمپنی “NSO” کی طرف سے تیار کردہ Pegasus فون کے صارف کو پیغامات، ڈیٹا، تصاویر اور رابطوں تک رسائی حاصل کرنے کی اجازت دیتا ہے اور مائیکروفون اور کیمرے کو دور سے فعال کرنے کی اجازت دیتا ہے۔

اسرائیلی کمپنی نے ہمیشہ اس بات کی تصدیق کی ہے کہ وہ اس سافٹ ویئر کو صرف ممالک کو فروخت کرتی ہے اور اس کی فروخت کو قابض حکام سے پیشگی منظوری لینی چاہیے۔