بنی گانٹز: اسرائیل امریکی قیادت میں “مشرق وسطیٰ فضائی دفاعی اتحاد” تشکیل دے رہا ہے

امریکی وزیر جنگ نے اعلان کیا ہے کہ وہ مشرق وسطیٰ میں امریکی قیادت میں فضائی دفاعی اتحاد تشکیل دے رہا ہے۔

فاران: فارس نیوز ایجنسی کے بین الاقوامی ڈیسک کے مطابق، اسرائیل کے وزیر جنگ بنی گانٹز نے آج (پیر) کو کہا کہ صیہونی حکومت امریکہ کی قیادت میں “مشرق وسطی فضائی دفاعی اتحاد” تشکیل دے رہی ہے۔

یروشلم پوسٹ کے مطابق گانٹز نے ایک بیان میں کہا کہ صیہونی حکومت امریکی حمایت یافتہ علاقائی فضائی دفاعی اتحاد تشکیل دے رہی ہے، اور اس کا مقصد صرف ایران کے حملوں کو ناکام بنانا ہے اور ممکن ہے آئندہ مہینے امریکی صدر جوبائیڈن کے دورے کے دوران اس اتحاد کو تقویت حاصل ہو۔

پارلیمنٹ کے ارکان کے ساتھ ملاقات میں اسرائیلی وزیر جنگ نے نام نہاد “مشرق وسطی فضائی دفاعی اتحاد” کی نقاب کشائی کی اور کہا کہ اس طرح کا دفاعی تعاون امریکہ کے ساتھ منسلک عرب ممالک کے ساتھ انجام پا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ “پچھلے ایک سال کے دوران، میں نے پینٹاگون اور امریکی انتظامیہ میں اپنے شراکت داروں کے ساتھ ایک وسیع تر پروگرام کی قیادت کی ہے جو اسرائیل اور خطے کے ممالک کے درمیان تعاون کو مضبوط بناتا ہے۔”

گانٹز نے اس پروگرام کی پیشرفت پر تبصرہ کیا اور ایک بار پھر اسلامی جمہوریہ ایران کو تل ابیب کے منصوبوں کا نشانہ بناتے ہوئے کہا: “یہ منصوبہ اب عملی طور پر کام کر رہا ہے اور اس نے اسرائیل اور دیگر ممالک پر حملہ کرنے کی ایران کی کوششوں کو ناکام بنایا ہے۔”

گانٹز کے بیانات کے متن میں شریک ممالک کا ذکر نہیں کیا گیا اور نہ ہی ناکام حملوں کے بارے میں مزید تفصیلات فراہم کی گئیں۔