دشمن کو اپنے فوجیوں اور آباد کاروں کے ذریعے بھاری قیمت چکانا ہو گی

حماس کی طرف سے جاری ایک پریس بیان میں کہا گیا ہے کہ جنین میں سالہ مجاھد کامل عبداللہ علاونہ کی شہادت دشمن کو مہنگی پڑے گی اور ہم اس کا بدلہ لیں گے۔

فاران: اسلامی تحریک مزاحمت [حماس] نے غرب اردن اور القدس کے بہادر فلسطینی مزاحمت کاروں اور مجاھدین سے کہا ہے کہ وہ دشمن کے اہداف پر پوری طاقت کے ساتھ حملے کریں۔ حماس کا کہنا ہے کہ ہمارے شہداء کا خون سستا نہیں ہے اور دشمن کو اس خون کی بھاری قیمت ادا کرنی ہوگی۔ یہ قیمت دشمن کو اپنے فوجیوں اور آباد کاروں کے ذریعے ادا کرنا پڑے گی۔

حماس کی طرف سے جاری ایک پریس بیان میں کہا گیا ہے کہ جنین میں سالہ مجاھد کامل عبداللہ علاونہ کی شہادت دشمن کو مہنگی پڑے گی اور ہم اس کا بدلہ لیں گے۔

خیال رہے کہ ہفتے کے روز جنین کے قصبے جبعہ میں قابض ریاست کی گولی لگنے شہید ہو گئے ہیں۔

حماس نے شہید علاونہ کے والد سابق اسیر عبداللہ علاونہ کے اہل خانہ سے تعزیت کی اور جنین اور اس کے ثابت قدم کیمپ کو سلام پیش کیا۔ حماس کا کہنا ہے کہ شہید فلسطینی کا خون قابض ریاست کے غاصبانہ تسلط سے آزادی کی راہ ہموار کرے گا۔

اتوارطبی کو ذرائع نے علاونہ کی موت کی اطلاع دی۔ شہید کے بھائی ڈاکٹر معتز علاونہ کا کہنا ہے کہ کامل کے پیٹ میں گولیاں لگیں جو اس کے لیے جان لیوا ثابت ہوئی ہیں۔ اس کے علاوہ قابض فوج کی طرف سے فائرنگ سے اس کی شریان بھی کٹ گئی تھی۔

انہوں نے وضاحت کی کہ کامل کا شدید خون بہہ رہا تھا اور جنین کے ابن سینا اسپتال کے ڈاکٹروں نے ان کی حالت پر قابو پانے کی کوشش کی لیکن ان کی صحت کی حالت بہت مشکل تھی۔

قابل ذکر ہے کہ شہید علاونہ کے ایک بھائی جن کا نام بھی کامل تھا کو کو اسرائیلی فوج نے2003ء میں شہید کردیا تھا۔