زندگی بھر فلسطینی کاز کی خدمت میں مصروف کویتی وکیل کا انتقال

مرحوم کا شمار 1952 میں "عرب نیشنلسٹ" تحریک کے بانیوں میں ہوتا ہے۔ وہ کویتی دستور ساز اسمبلی کے وائس چیئرمین اور کئی اجلاسوں تک اپنے ملک کی پارلیمنٹ کے رکن رہے۔

فاران: کویت نے پیر کے روز مفکر اور سیاست دان احمد الخطیب کو اپنے ملک اور عرب قوم کے مسائل بالخصوص فلسطینی کاز کی خدمت میں مصروف زندگی گذارنے کے بعد ان کی وفات پر ایک روزہ سوگ کا اعلان کیا۔

الخطیب جن کا 95 سال کی عمر میں انتقال ہو گیا 1962 میں کویتی آئین کے مسودے کی تیاری میں سب سے نمایاں کردار ادا کرنے والوں میں سے ایک تھے اور ان کی زندگی میں بہت سے ایسے حالات آئے جن کو قومی اور عربوں کی فتح سے ممتاز کیا گیا تھا۔

مرحوم کا شمار 1952 میں “عرب نیشنلسٹ” تحریک کے بانیوں میں ہوتا ہے۔ وہ کویتی دستور ساز اسمبلی کے وائس چیئرمین اور کئی اجلاسوں تک اپنے ملک کی پارلیمنٹ کے رکن رہے۔

کویت میں فلسطینی سفیر رامی طھوب نے انسٹاگرام پر فلسطینی سفارت خانے کے صفحہ سے شائع ہونے والے ایک بیان میں الخطیب کی وفات پر تعزیت کا اظہار کیا۔

طہوب نے کہا فلسطین ایک عظیم عرب وکیل  سے محروم ہوگیا ہے۔

“احمد الخطیب” ہیش ٹیگ دو دنوں تک کویت کے مقبول ترین ہیش ٹیگز کی فہرست میں سرفہرست رہا کیونکہ کویتی جماعتوں اور شخصیات نے ٹوئٹر پر ان کی وفات پر انہیں خراج عقیدت پیش کیا اور ان کی وفات کو قومی المیہ قرار دیا۔