شقی القلب صہیونی پولیس کی انسانیت سوز کارروائی

دونوں شیر خوار گاڑی میں بلکتے رہ گئے جب کہ قابض فوج نے انہیں گاڑی میں تنہا چھوڑ کر انسان دشمنی کا بدترین مظاہرہ کیا ہے۔

فاران: اسرائیلی پولیس فورس نے گذشہ شب دو شیر خوار بچوں کو ایک گاڑی میں بند کر کے ان کے والدین کو حراست میں لے کر بیت المقدس کے ایک حراستی مرکز میں منتقل کر دیا۔

دونوں شیر خوار گاڑی میں بلکتے رہ گئے جب کہ قابض فوج نے انہیں گاڑی میں تنہا چھوڑ کر انسان دشمنی کا بدترین مظاہرہ کیا ہے۔

قابض فورسز نے گذشتہ رات نوجوان انس عفانہ اور اس کی اہلیہ کو مقبوضہ بیت المقدس کے جنوب میں واقع قصبے صورباھر سے اس وقت حراست میں لیا جب وہ اپنی گاڑی میں کہیں جا رہے تھے۔

صہیونی فورس نے دعویٰ کیا کہ عفانہ کے پاس شہر میں داخلے کا اجازت نامہ نہیں تھا۔

گاڑی کے قریب شہریوں کا ایک ہجوم جمع ہو گیا۔ انہوں نے بچوں کے ساتھ بات چیت کی۔ قبل ازیں قابض فورسز نے نوجوان اور اس کی بیوی کو بعد میں رہا کر دیا۔

اس واقعے کے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد شہریوں کی طرف سے قابض فوج کے اس طرز عمل کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے فلسطین دشمنی کی بدترین مثال قرار دیا ہے۔