صیہونی عسکریت پسندوں کے ہاتھوں مغربی کنارے میں کئی فلسطینی گرفتار

صیہونی عسکریت پسندوں نے حالیہ ہفتوں میں فلسطینیوں کے خلاف شدید تشدد اور وسیع پیمانے پر جرائم کی لہر کے بعد آج (منگل) صبح مغربی کنارے کے الگ الگ علاقوں میں چھ فلسطینیوں کو گرفتار کر لیا۔

فاران: فلسطینی خبر رساں ایجنسی وفا کے مطابق قابض فورسز نے جنین اور الدوحہ کے قصبوں جبع، السیلا الحارثیہ اور الیامون پر چھاپے مارے اور چھ فلسطینیوں کو گرفتار کر لیا۔

پیر کو مغربی کنارے کے الگ الگ علاقوں پر اسرائیلی فوج کے حملے میں دو فلسطینی زخمی اور 18 دیگر کو حراست میں لے لیا گیا ۔

دوسری جانب اقوام متحدہ کے خصوصی رابطہ کار برائے مشرق وسطیٰ نے مقبوضہ علاقوں اور بیت المقدس میں حالیہ مہینوں میں تشدد پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ تشدد بند ہونا چاہیے۔

اقوام متحدہ کے خصوصی رابطہ کار برائے مشرق وسطیٰ “ٹور وینس لینڈ” نے پیر کی رات اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو مقبوضہ مغربی کنارے بشمول بیت المقدس میں حالیہ مہینوں میں دیکھے جانے والے تشدد پر تشویش کا اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ اشتعال انگیز کارروائیوں اور بیان بازی سے تشدد میں اضافہ ہوا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ انہیں شہریوں کے خلاف جاری تشدد پر گہری تشویش ہے، جس سے عدم اعتماد بڑھے گا اور تنازع کے پرامن حل کو نقصان پہنچے گا۔ تشدد بند ہونا چاہیے اور تمام مجرموں کا احتساب ہونا چاہیے۔