عسقلان میں صہیونی پولیس کے ہاتھوں فلسطینی جوان شہید

مقبوضہ ویسٹ بینک میں ایک بار پھر شہادت پسندانہ کاروائی ہوئی۔ ایک فلسطینی نے ویسٹ بینک کے عسقلان شہر میں صیہونی پلیس کے ایک کارندے پر حملہ کیا جس میں وہ زخمی ہوگیا۔

فاران: صیہونی پلیس، صیہونی حکومت کے توسیع پسندانہ اہداف کے حصول کے لئے ہر روز فلسطینیوں کو اپنے جبر و تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے انہیں شہید و زخمی کرتی یا گرفتار کرکے جیل میں ڈالتی ہے۔ فلسطینیوں نے بھی ان جرائم کا مقابلہ کرنے کے لئے مزاحمت و استقامت کو جاری رکھنے کی ٹھان لی ہے اور اسی تناظر میں وہ شہادت پسندانہ کاروائي کرتے ہیں جسکی تازہ لہر اس وقت مقبوضہ مغربی کنارے میں اٹھی ہے۔

نیوز ایجنسی وفا کے مطابق، عسقلان شہر میں منگل کے روز ایک فلسطینی نے صیہونی پلیس کے ایک کارندے پر چاقو سے حملہ کیا جس میں وہ زخمی ہوگیا۔ اس کے بعد صیہونی پلیس نے اس جوان فلسطینی کو گولی مار کر شہید کر دیا۔ اس واقعے کے حوالے سے مزید تفصیلات کا انتظار ہے۔

مقبوضہ فلسطینی میں گزشتہ تقریباً ایک ماہ کے دوران 5 شہادت پسندانہ کاروائياں کی جا چکی ہیں جن میں 14 صیہونی ہلاک 30 کے قریب زخمی ہوئے ہیں۔ ان کاروائیوں سے صیہونی ٹولے اسرائیل کی دفاعی کمزوریاں اجاگر ہوتی جا رہی ہیں جس کی بنا پر صیہونی وزیر اعظم نفتالی بنت کی کابینہ کو بھی تنقیدوں کا سامنا ہے۔

صیہونی دہشتگردی سے تنگ آ چکے فلسطینیوں نے اس سے چھٹکارا پانے کے لئے ہر ممکن اقدام منجملہ شہادت پسندانہ کاروائي کرنے کا عزم کر لیا ہے۔