فلسطینیوں پر مظالم اور یہودی بستیوں کی توسیع قابل مذمت ہے: چین

''یہ فلسطینیوں کی زمین اور علاقوں کے خلاف تجاوازت پر مبنی ہیں۔ اس کے نتیجے میں فلسطینی قدرتی وسائل بھی متاثر ہو رہے ہیں۔ اور فلسطینیوں کا حق خود ارادیت بھی، یہ صورت حال تشویشناک ہے۔ 

فاران: عوامی جمہوریہ چین نے فلسطین میں اسرائیلی ظلم و جبر کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ” اس میں کوئی شبہ نہیں ہے کہ  فلسطیینی علاقوں  میں اسرائیلی مظالم حد سے بڑھ چکے ہیں۔ یہ مظالم مسلسل ہو رہے ہیں اور فلسطینیوں کے خلاف سنگین جرائم کی صورت اختیار کر چکے ہیں۔ ”چینی مندوب نے خاتون صحافی شیریں ابو عاقلہ کی اسرائیلی فوج کے ہاتھوں شہادت کے بارے میں تحقیقات کا بھی مطالبہ کیا۔

اقوام متحدہ میں چین کے مستقل مندوب زانگ جون نے مشرق وسطی پر سلامتی کونسل کی ایک بریفنگ کے دوران بتایا۔ اس بریفنگ میں مسئلہ فلسطین پر بھی بات ہوئی اور بتایا گیا کہ فلسطینی علاقوں میں اسرائیل کی ناجائز  یہودی بستیوں کی توسیع  جاری ہے۔

”یہ فلسطینیوں کی زمین اور علاقوں کے خلاف تجاوازت پر مبنی ہیں۔ اس کے نتیجے میں فلسطینی قدرتی وسائل بھی متاثر ہو رہے ہیں۔ اور فلسطینیوں کا حق خود ارادیت بھی، یہ صورت حال تشویشناک ہے۔

چین کے مندوب کا کہنا تھا ” مسئلہ فلسطین بین الاقوامی انصاف اور جائزہ کاری کے معاملے میں ایک لٹمس پیپر ہے۔  الجزیرہ سے وابستہ امریکی صحافی ابو عاقلہ کی شہادت کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ ضروری ہے کہ اسرائیلی جرائم کے خلاف انویسٹی گیشن شروع کی جائے۔ ”

چینی نمائندے نے بین الاقوامی برادری سے مطالبہ کیا ” ایسے اقدامات کی ضرورت ہے جن سے مسئلہ فلسطین کو اس کے راستے سے نہ ہٹایا جا سکے اور یہ اپنے مسلمہ حل کی طرف بڑھ سکے۔”