ماہ مبارک میں صہیونی شرپسندوں کے خلاف مزاحمت جاری رکھنے کا عزم

حماس نے مسجدِ اقصیٰ پر اسرائیلی حملوں کو روکنے کے لیے اپنی مسلسل کوششوں کا ذکر کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ فلسطینی عوام اسرائیلی حملوں کو پسپا کرنے کے لیے ہر دم تیار ہیں۔

فاران: فلسطینی رہنماؤں اور کارکنوں نے فلسطینی عوام سے ماہِ رمضان المبارک کے دوران مسجدِ اقصیٰ میں اپنی موجودگی کو یقینی بنانے کا مطالبہ کیا تاکہ اسے یہودی آباد کاروں کے حملوں اور سازشوں سے بچایا جا سکے۔

ایک پریس ریمارکس میں، حماس نے مسجدِ اقصیٰ پر اسرائیلی حملوں کو روکنے کے لیے اپنی مسلسل کوششوں کا ذکر کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ فلسطینی عوام اسرائیلی حملوں کو پسپا کرنے کے لیے ہر دم تیار ہیں۔

دریں اثنا، فلسطینی کارکنوں نے رمضان المبارک کے دوران مسجدِ اقصیٰ میں اعتکاف کرنے کا مصمم ارادہ کر رکھا ہے تاکہ اسے انتہاپسند یہودیوں سے بچایا جا سکے جو آنے والے دنوں میں کسی بھی قیمت پر مسجدِ اقصیٰ میں جانوروں کی قربانی کی رسومات ادا کرنے کی تیاریاں کر چکے ہیں۔

القدس اور بیرزیت جامعات میں مسجدِ اقصیٰ پر اسرائیلی چھاپوں اور جانوروں کی قربانی کی منصوبہ بندی کے خلاف زبردست مظاہرے کیے گئے۔

مظاہرین نے فلسطینی اتھارٹی سے مطالبہ کیا کہ وہ اسرائیل کے ساتھ امنِ عامہ کے معاہدات ختم کرے۔ اسرائیلی جارحیت اور اتھارٹی کا مسلسل تعاون فلسطینی شہداء سے غداری قرار دیا گیا۔

گذشتہ نمازِ جمعہ کے بعد مسجدِ اقصیٰ پر چھاپے کے دوران اسرائیلی فوجیوں کی گولیوں اور آنسو گیس کے استعمال سے 160 سے زائد فلسطینی زخمی جب کہ کم از کم 450 نمازیوں کو گرفتار کیا گیا تھا۔