مقبوضہ علاقوں میں صہیونی دھشتگردی سے ایک اور فلسطینی شہید

50 سالہ عبدالرحیم عبدالطیف سلامہ کو ان کے گھر کے قریب ان کی گاڑی میں گولیاں مار کر شدید زخمی کیا گیا۔

فاران: طبی ذرائع نے بتایا ہے کہ سنہ 1948ء کے مقبوضہ علاقے قلنسوہ میں نقاب پوش صہیونی ایجنٹوں کی فائرنگ سے ایک فلسطینی شہری شہید ہو گیا۔

مقامی ذرائع نے بتایا کہ 50 سالہ عبدالرحیم عبدالطیف سلامہ کو ان کے گھر کے قریب ان کی گاڑی میں گولیاں مار کر شدید زخمی کیا گیا۔ انہیں اسپتال پہنچایا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے۔ عبدالرحیم شادی شدہ تھے اور ان کے کئی بچے ہیں۔

خیال رہےکہ سنہ 1948ء کے مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں قاتل صہیونی گینگ کا راج ہے جو منظم انداز میں فلسطینی آبادی کی نسل کشی کے مرتکب ہو رہے ہیں۔ دوسری طرف اسرائیلی پولیس اور قانون نافذ کرنے والے صہیونی ادارے دانستہ طور پر ان جرائم پر خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔ قاتل کھلے عام گھومتے پھرتے ہیں مگر اسرائیلی پولیس انہیں گرفتار نہیں کرتی۔

سنہ 2022ء کے آغاز سے اب تک مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں 22 عرب شہریوں کو موت کے گھاٹ اتارا جا چکا ہے۔