پہلی مرتبہ ”افریقی شیر 2022ء” نامی جنگی مشقوں میں اسرائیل کی شرکت

یہ مشق گذشتہ ہفتے افریقہ میں امریکی فورسز اور مراکش رائل آرمڈ فورسز کی قیادت میں سال کی سب سے بڑی فوجی مشق کے عنوان اور ان دو قوتوں کے تعاون سے منعقد ہوئی تھی۔

فاران: اسرائیل کی وزارت جنگ نے پہلی مرتبہ مراکش میں ہونے والی جنگی مشقوں ”افریقی شیر” میں شرکت کی خبر دی ہے۔ صیہونی فوج کے ترجمان ”آویخائی ادرعی” نے اعلان کیا ہے کہ صیہونیوں فوجیوں نے مراکش میں پہلی بار بین الاقوامی فوجی مشقوں “افریقی شیر 2022ء” میں شرکت کی ہے۔ ایک رپورٹ کے مطابق ادرعی کا کہنا ہے کہ تل ابیب میں وزارت جنگ کے سیاست اور فوج کے دفاتر میں مشرق وسطیٰ اور شمالی افریقہ کے شعبے کے سربراہ، جو مراکش میں ملٹری اتاشی کے طور پر کام کر رہے ہیں، صہیونی فوج کی کارکردگی دیکھنے کے لیے اس مشق میں شامل ہوئے تھے۔

یہ مشق گذشتہ ہفتے افریقہ میں امریکی فورسز اور مراکش رائل آرمڈ فورسز کی قیادت میں سال کی سب سے بڑی فوجی مشق کے عنوان اور ان دو قوتوں کے تعاون سے منعقد ہوئی تھی۔ یہ امر قابل غور ہے کہ صیہونی فوجیوں نے اس وقت اس فوجی مشق میں حصہ لیا، جب وہ معاہدوں کے ذریعے مراکشی حکومت کو ہتھیار فروخت کرنے کے خواہاں ہیں۔ ہتھیاروں کی فروخت کے سلسلے میں مقامی اور بین الاقوامی اخباری جریدوں نے بھی ایک رپورٹ جاری کی ہے کہ مراکش اور خلیج فارس کے ممالک نے اسرائیل سے جنگی اور دفاعی سسٹم کی خریداری کی درخواست کی ہے۔